239

قوم کا ہیرو اس آرٹیکل کو ضرور پڑھیں.

یہ 1997 کی بات ہے کپتان نے سب کھلاڑیوں کو اکٹھا کیا اور دفعتاً اُس کی نظر اُس نوجوان کھلاڑی پہ ٹھہر گئی اُس نے اُسے کہا کہ کل تُم تیز کھیلو گے. کپتان کی بات سے سب حیران تھے اور وہ نوجوان پریشان. کہ وہ کیسے کرے گا یہ سب ابھی انٹرنیشنل کرکٹ میں ایک میچ کھیلا ہے بس اور کل تو مقابلہ بھی ورلڈ کپ چمپیئن سے ہے.

اگلے دن میچ کا آغاز ہوا اور سلیم الہیٰ کپتان سعید انور کے ساتھ اوپن کرنے گئےجب پہلا کھلاڑی آؤٹ ہوا تو دس اوورز کا کھیل ہو چُکا تھا کپتان سعید انور کریز پر موجود تھے وہ نیا کھلاڑی جب کھیل کے لیے میدان میں آنے لگا تووقار یونس نے اُسے ایک بیٹ دیا اور کہا یہ سچن ٹنڈولکر کا بیٹ ہے اسے لے جاؤ.

وہ میدان میں پہنچا اور پھرپہنچا اور پھر دُنیا کرکٹ کو حیران کر دیا اُس دور میں جب ایک ففٹی بنانے کے لیے بیٹسمین ستر،اسی گیندیں کھیل جاتے تھے اُس نے صرف 37 گیندوں پر کرکٹ کی دُنیا کی سب سے تیز ترین سنچری بنا ڈالیجی ہاں یہ نوجوان صاحبزادہ شاہد خان آفریدی تھا.

جس کو اگر جدید کرکٹ کا بانی کہا جائے تو یہ غلط نہ ہو گا. یہ وہ ہی شاہد آفریدی ہے جسے دُنیا بوم بوم کے نام سے جانتی ہے اور یہ وہی ہے کہ جس کے بارے میں کرکٹ کے سابق اسٹارز کا کہنا ہے کہ اگر شاہد آفریدی نہ ہو تو کرکٹ بھی کرکٹ نہی ہے.

جی ہاں یہ وہی آفریدی ہے جس نے پاکستان کو ایک ٹی ٹونٹی کپ جتوایا بلکہ کئی میچز میں اپنی دھواں دار بیٹنگ سے مخالف بالرز کے چھکے چھڑا دیئے. گلین میک گراتھ،بریٹ لی. شان پولاک، جیکس کیلس، چمندا واس، مُرلی دھرن، شین وارن، عرفان پٹھان، ہربھجن سنگھ،بالا جی، روی چندرن ایشون، ظہیر خان،اینڈریو فلنٹوف اور ایسے بے شُمار گیند باز تھےجو آفریدی کے کُہر کا نشانہ بنتے رہے.

آفریدی وہ کھلاڑی تھا کہ جس کے دُنیا میں کروڑوں فین ہیں. اور یہ بھی سچ ہے کہ بے شک دُنیا ء کرکٹ کو سچن ٹنڈولکر، بریڈمین،سٹیواہ، جیسے کھلاڑیوں کے متبادل مل جائیں لیکن آفریدی کا متبادل نہی ملے گا کیونکہ وہ ایک ہیرو تھا، ہیرو ہے اور ہیرو رہے گا.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں